allama iqbal love poetry in urdu | Allama Iqbal famous love poetry

allama iqbal love poetry in urdu

allama iqbal love poetry in urdu

محبت
شہیدِ محبت نہ کافر نہ غازی
مُحّبَت کی رسمیں نہ تُرکی نہ تازی
وہ کچھ اور شے ہے ، محبت نہیں ہے
سکھاتی ہے جو غزنوی کو ایازی
یہ جوہر اگر کارفرما نہیں ہے
تو ہیں علم و حکمت فقط شیشہ بازی
نہ محتاجِ سُلطاں ، نہ مرعوبِ سُلطاں
مَحّبَت ہے آزادی و بے نیازی
مرا فَقر بہتر ہے اسکندری سے
یہ آدم گری ہے ، وہ آئینہ سازی

Read Allama Iqbal poem on education

iqbal love poetry

محبت
تعارف ۔
اس نظم میں محبت کی حقیقت پر روشنی ڈالی ہے اور یہ بتایا گیا ہے کہ محبت دراصل آدم گری ہے یعنی اس کی بدولت انسان بنتا ہے اور انسانیت سکھاتا ہے اس کی مختلف خصوصیات بیان بھی کی گئ ہیں ۔

Read Allama Iqbal’s father dream before Allama was born

allama iqbal in urdu shayari

تشریح ۔
1۔ محبت کا شہید نہ کافر ہوتا ہے نہ غازی اور محبت کی رسمیں اور رواج نہ ترکی ہوتی ہیں نہ عربی۔
یعنی محبت مخصوص قوموں یا ملکوں سے ماورا ہے ۔ اس میں مزہبی تعصب نام کو بھی نہیں ہوتا۔
وہ مسلمانوں اور کافروں کو ایک نظر سے دیکھتا ہے ۔ یہ جذبہ دنیا کے ہر گوشے میں پایا جاتا ہے ۔

allama iqbal quotes love

2 ۔ جو چیز محمود غزنوی جیسے بادشاہ کو اپنے غلام ایاز کا فریفتہ کر کے اس کا غلام بنا دینا سکھا تی ہے وہ محبت نہیں کچھ اور شے ہے ۔ تم چاہو تو اسے مادہ پرستی یا نفس پرستی قرار دے سکتے ہو ۔ محبت اس سے بہت بالا ہے صحیح معنوں میں عشق وہ ہوتا ہے جو محبوب حقیقی سے کیا جاۓ۔ انسان سے عشق کیا جاۓےو اسے عشق نہیں بلکہ بوالہوسی اور نفس پرستی کہنا چاہیے ۔

3 ۔ اگر علم و حکمت میں محبت کا جوہر موجود نہ ہو تو یہ دونوں چیزیں محض فریب کاری اور فلسفہ عیاری رہ جاتی ہیں ۔ ( جو قوم مختلف علوم و فنون سے تو بہرہ ور ہو لیکن عشق کی دولت سے اس کا دامن خالی ہو ، اس کے علم اور حکمت سے اہل دنیا کو زرا بھی نفع حاصل نہیں ہو سکتا۔ بلکہ الٹا نقصان پہنچتا ہے کیونکہ وہ اپنے علم سے دغا بازی کا کام لیتی ہے ۔

4 ۔محبت نہ بادشاہوں کی محتاج ہوتی ہے نہ ان سے دبتی اور خوف کھاتی ہے ۔ محبت آزادی اور بے پروائ کا دوسرا نام جو آزاد ہو وہ کسی فرماں روا سے کیونکر دب سکتا ہے ؟

5 ۔ میری فقیری اور درویشی سکندر کی بادشاہی سے اچھی ہے اس لیے کہ میری درویشی آدمیت اور انسانیت کا سبق سکھاتی ہے بادشاہی سے صرف دینوی جاہ و جلال مقصود ہے ۔سکندر کے پاس آئینہ سازی کے سوا کوئ ہنر ہنر نہیں ۔ اُس آئینہ سازی سے انسانیت کو کیا فائدہ پہنچتا ہے ؟ فقیری آدمی کو صحیح معنوں میں انسان بنا دیتی ہے

Read Allama Iqbal Famous book bang e dara

allamaiqbal

I am Sabraiz, WordPress and SEO Expert. I love Allama Iqbal's poems, ghazals, and Poetry. You can message me through the contact us page for any query. I would love to answer it!

You may also like...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *